55۔ تیرے لئے ہے آنکھ کوئی اشکبار دیکھ

کلام
طاہر ایڈیشن 2004صفحہ138۔139

55۔
تیرے لئے ہے آنکھ کوئی اشکبار دیکھ

کالج کے ابتدائی زمانہ کی ایک غزل جس کا پہلا شعر والدہ مرحومہ ؓ کی ایک تصویر
کا مرہون منت ہے۔
تیرے لئے ہے آنکھ کوئی اشکبار دیکھ

57۔ بہیں اشک کیوں تمہارے انہیں روک لو خدارا

کلام
طاہر ایڈیشن 2004صفحہ141

57۔
بہیں اشک کیوں تمہارے انہیں
روک لو خدارا

بہیں اشک کیوں تمہارے اِنہیں روک لو
خدارا
مجھے دکھ قبول سارے یہ ستم نہیں گوارا
ہو کسی کے تم سراپا مگر آہ کیا کروں
میں
میری